دارالحکومت کے سرکاری اسکولوں کی تعمیر اور بحالی کے لیے 422 ارب روپے جاری

 اسلام آباد : وفاقی حکومت نے  دارالحکومت کے 200سرکاری اسکولوں کی تعمیر اور بحا لی کے لیے 422 ارب روپے جاری کردیے۔ فیڈرل ڈائریکٹوریٹ آف ایجوکیشن کے ذرائع کے مطابق اسکولوں میں تعمیراتی کام میں تاخیر کی وجہ سے طالبعلموں کو مسائل کا سامناتھا۔ذرائع کے مطابق ٹھکیداروں نے گزشتہ سال نومبر میں فنڈز کی عدم دستیابی کے باعث کام روک دیا تھا۔حکام کے مطابق 90 اسکولوں میں کام مکمل کردیا گیا ہے لیکن تعمیرات میں غیر معیاری کام کے الزام کی وجہ سے نیب ان تعمیرات کی تفتیش کر رہا ہے ۔اس وجہ سے ایف ڈی ای نے ان اسکولوں کو ابھی تک تحویل میں نہیں لیا ۔

ایف ڈی ای کے ڈائریکٹر جنرل ، سید عمیر جاویدکا کہنا تھا کہ اس منصوبے مین ہمارا کوئی عمل دخل نہیں ہے اور اس منصوبے پر عمل درامد کے لیے کیڈ نے ایک ٹیم بنائی تھی لیکن بعد ازاں کیڈ کی وزارت کے خاتمے کی وجہ سے یہ منصوبہ وزارت تعلیم کے سپرد کر دیا گیا تھا۔ابھی منصوبے پر کام نامکمل ہے اور جونہی منصوبہ مکمل ہوگا ہم اسکولوں کو اپنی تحویل میں لے لیں گے۔اس تمام صورتحال کا جائزہ لیتے ہوئے وفاقی حکومت نے تعمیراتی کام کے لیے فندز جاری کر دیے ہیں ۔8 اسکولوں میں باقاعدہ کام شروع کردیا گیا ہے جبکہ رمضان کے بعد کام میں تیزی آجائے گی۔

About Maham Tahir

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔