میرا شہر میری ذمہ داری، اسلام آباد کے دو ننھے بھائیوں کی بڑی کاوش

2 brothers NI

ننھے شاہزین اور سلیمان ایک دن اپنے شہر اسلام آباد میں واقع ایک پارک کی سیر کو گئے۔ ان کا ارادہ تھا کہ ہم وہاں جا کے خوب کھیلیں گے۔ اور پورے پارک کی سیر کے بعد شام میں گھر واپس آئیں گے۔ لیکن وہاں جا کر وہ بہت حیران ہوئے۔ ہر طرف کھانے پینے کی بچی کچی اشیا اور ان کے ریپرز، کورز، کاغذ، ڈسپوزایبل گلاس اور پلیٹیں ایسے بکھری پڑی تھیں کہ پورا پارک ایک کوڑا دان کا منظر پیش کر رہا تھا۔

دونوں ننھے بھائیوں نے کھیلنے کا ارادہ ترک کر کے ذمہ داری کا مظاہرہ کرتے ہوئے سب سے پہلے پارک کی صفائی کا فیصلہ کیا۔ اور تمام ریپرز اور بکھری ہوئی اشیا ایک ایک کر کے چُن لیں، اور پورا پارک صاف کر دیا۔ ان دو چھوٹے بچوں کی یہ ساری سرگرمی کسی نے کیمرے کی آںکھ میں محفوظ کر لی، اور یوں دیکھتے ہی دیکھتے ان کی ویڈیو وائرل ہو گئی۔ شہریوں نےسوشل میڈیا پر ان کے جذبے اور نیک کام کو بہت سراہا۔

 

میرا شہر میری ذمہ داری، اسلام آباد کے دو ننھے بھائیوں کی بڑی کاوش

 

ویڈیو وائرل ہونے پر چیف کمشنر اسلام آباد محمد عثمان یونس نے دونوں ننھے بھائیوں سے ملاقات کی۔ انھوں نے اپنے سوشل میڈیا اکاؤنٹ پر ملاقات کی ویڈیو شیئر کی۔ اور شہر کی صفائی سے متعلق ان کے نیک عمل اور کاوشوں کو سراہتے ہوئے کہا،

’شاہ زین اور سلیمان سے ملاقات کا شرف حاصل ہوا۔ وہ ہمارے مستقبل کی روشن تصویر ہیں جو ایک مثالی اور ماڈل شہری رویے کے حامل ہیں۔ اس رویے کو عام کرنے اور اپنی آنے والی نسلوں کو تربیت دینے کے لیے ہم جلد ہی کِڈز ایمبیسڈر  KidsAmbassader پروگرام شروع کریں گے‘۔

قابلِ ذکر امر یہ ہے کہ شاہزین اور سلیمان اپنے شہر کو ایک ماڈل سٹی برقرار رکھنے کے اس نیک عمل میں بالکل عار محسوس نہیں کرتے۔

یہ دونوں ننھے بھائی اپنے ہم عمر بچوں اور ان تمام بڑوں کے لیے ایک مثال ہیں۔ جو پارکوں یا عوامی مقامات پر کھانے پینے کی اشیا اور ان کے ریپرز پھینک کر شہر کے حسن کو ماند کرتے ہیں۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کیلئے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔