ممکنہ سیلاب سے بچاؤ کے لئے ہائیڈرولوجیکل سروے کرانے پر غور: سی ڈی اے

اسلام آباد: وفاقی ترقیاتی ادارے کیپیٹل ڈیویلپمنٹ اتھارٹی (سی ڈی اے) کے چیئرمین نے اسلام آباد میں غیرمعمولی بارشوں کے پیشِ نظر ہائیڈرولوجیکل سروے کی ہدایات جاری کرتے ہوئے عمارتوں کی تعمیرات، لے آؤٹ پلان اور این او سی کو سروے سے مشروط کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق چیئرمین سی ڈی اے عامر علی احمد نے وفاقی دارالحکومت میں غیر معمولی بارشوں کے پیشِ نظر زون ٹو، تھری، فور اور فائیو میں ہائیڈرولوجکل سروے کروانے کا فیصلہ کیا ہے جس کے تحت آبی گزرگاہوں کا از سرِنو جائزہ لیا جائے گا۔

علاوہ ازیں اس سروے کی مدد سے پانی کے بہاؤ کو جانچنے، پانی کی گہرائی، پانی کی خصوصیات اور اس کی رکاوٹوں کا بھی جائزہ لینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

حکام کے مطابق سی ڈی اے کے زیرِانتظام علاقوں بالخصوص اسلام آباد میں آبی گزرگاہوں کے لیے نالوں کے گرد و نواح میں غیرقانونی تعمیرات کا بھی سروے کرانے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے۔

چیئرمین سی ڈی اے کی ہدایت پر ڈائریکٹر ٹیکنیکل فیصل نعیم نے تحریری احکامات جاری کر دئیے ہیں جبکہ یہ سروے انجینئرنگ اینڈ چیف برانچ سے کروایا جائے گا۔

مذکورہ سروے میں آبی گزر گاہوں کے حوالے سے تجاویز بھی طلب کر لی گئی ہیں۔

یاد رہے کہ گذشتہ سال غیر معمولی بارشوں کی وجہ سے اسلام آباد کے سیکٹر ای الیون میں جانی و مالی نقصان ہوا تھا جس کی وجہ سے وفاقی حکومت کے حکم پر ہائیڈرولو جیکل سروے کروایا گیا تھا۔

موجودہ تحریری احکامات میں کہا گیا ہے کہ اسلام آباد کے زون ٹو، تھری، فور اور فائیو کے علاقوں میں کسی بھی قسم کی تعمیر ات کیلئے این او سی یا لے آؤٹ پلان کی منظوری ہائیڈرولوجیکل سروے سے مشروط ہوگی۔ جبکہ سی ڈی اے کے پلاننگ اور انجینئرنگ ونگ کو رپورٹ پر عمل درآمد کے احکامات بھی جاری کردئیے گئے ہیں۔

سی ڈی اے حکام کے مطابق ہائیڈرولوجیکل سروے مستقبل میں عمارتوں کی تعمیر کے حوالے سے فیصلہ سازی میں معاونت فراہم کرے گا اور مختلف اداروں کی جانب سے سیلابی صورتحال سے نمٹنے کا پلان بنانے میں بھی اس سروے سے مدد حاصل کی جا سکے گی۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کیلئے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔

About Zeeshan Javaid

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔