لاہور میں رہائشی و کمرشل کثیر المنزلہ تعمیرات کے لیے 295 ایکڑ زمین مختص: پنجاب حکومت

لاہور: پنجاب حکومت کی جانب سے سینٹرل بزنس ڈسٹرکٹ ڈویلپمنٹ اتھارٹی (سی بی ڈی) کو لاہور میں رہائشی و کمرشل کثیر المنزلہ تعمیرات کے لیے 295 ایکڑ زمین الاٹ کر دی گئی۔

حکام کے مطابق پنجاب سنٹرل بزنس ڈسٹرکٹ ڈویلپمنٹ اتھارٹی نے صوبائی حکومت کی ہدایات پر مخصوص علاقوں میں رہائشی اور کمرشل کثیر المنزلہ عمارتوں کی تعمیر کے لیے کام کا آغاز کر دیا ہے۔

حکام کا کہنا تھا کہ آئندہ آنے والے سالوں میں اس منصوبے میں اربوں روپے کی سرمایہ کاری ہوگی اور اس اقدام کے ذریعے بڑی تعداد میں لوگوں کو روزگار کے مواقع ملیں ہوں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ اس اسکیم کا مقصد لاہور کو ترقی یافتہ ممالک کے شہروں کی صف میں شامل کرنا ہے جہاں بلند و بالا عمارتیں تمام رہائشی، صحت کی دیکھ بھال اور تجارتی سہولیات ایک ہی جگہ پر مہیا کرتی ہیں۔

حکام نے بتایا کہ اس منصوبے میں اب تک تقریباً 56 ارب روپے کی سرمایہ کاری ہو چکی ہے جبکہ مستقبل میں یہ لاگت بڑھ کر 2 کھرب روپے تک پہنچنے کا امکان ہے۔

حکام کا کہنا تھا کہ ابتدائی طور پر 25 ہزار گاڑیوں کی پارکنگ کے لیے آٹھ منزلہ پلازہ کی تعمیر شروع کر دی گئی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ بزنس زون کی طرف جانے والی تمام سڑکوں پر ٹریفک کا بوجھ کم کرنے کے لیے کلمہ چوک انڈر پاس پر بھی کام شروع کر دیا گیا ہے جس پر 4.2 ارب روپے لاگت آئے گی۔ این ایل سی کو اس منصوبے کو چھ ماہ میں مکمل کرنے کا ٹاسک دیا گیا ہے۔

سی بی ڈی تمام شہداء کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لیے بابِ پاکستان کے اطراف ایک پارک بھی تعمیر کرے گی۔ علاوہ ازیں سی بی ڈی حکام کا کہنا تھا کہ بزنس زون میں جدید کاروباری دفاتر، ہوٹل، ریسٹورنٹس اور برانڈڈ مصنوعات کی دکانیں بھی ہوں گی۔ کاروباری مرکز میں پارکنگ، آئی ٹی، جدید ہسپتال، مساجد اور ضروریات زندگی کی تمام سہولیات بھی دستیاب ہوں گی۔

ان کا کہنا تھا کہ منصوبے کے تحت شہریوں کو مناسب قیمت پر رہائشی سہولیات فراہم کرنے کے لیے اپارٹمنٹس بھی تعمیر کیے جائیں گے۔

پہلے مرحلے کے تمام منصوبوں کو مکمل کرنے کے لیے پانچ برس کی مدت مقرر کی گئی ہے جس کے بعد دوسرے مرحلے پر کام کا آغاز کیا جائے گا۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کیلئے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔

About Rizwan Ali Shah

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے