غیرقانونی تجاوزات کے خلاف آپریشن میں 60 کنال سرکاری زمین واگزار: سی ڈی اے

اسلام آباد: وفاقی ترقیاتی ادارے کیپیٹل ڈویلپمنٹ اتھارٹی (سی ڈی اے) نے مختلف علاقوں میں غیرقانونی تجاوزات کے خلاف آپریشن کرتے ہوئے 60 کنال سرکاری اراضی واگزار کروا لی۔

حکام کے مطابق سی ڈی اے چیئرمین کیپٹن (ر) محمد عثمان یونس کی ہدایات پر انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ نے آئی سی ٹی انتظامیہ اور اسلام آباد پولیس کے تعاون سے مختلف علاقوں میں غیر قانونی تعمیرات کے خلاف گرینڈ آپریشن کیا۔ ان کارروائیوں کے نتیجے میں درجنوں غیر قانونی تعمیرات کو بھاری مشینری کی مدد سے مسمار کر دیا گیا، ان کارروائیوں کے دوران 60 کنال سرکاری اراضی واگزار کرائی گئی اور تجاوزات کا 13 ٹرک پر مشتمل سامان بھی قبضے میں لے لیا گیا۔

حکام نے بتایا کہ ان کارروائیوں کا آغاز اسلام آباد کے نواحی علاقے موضع کُری ڈھوک بالگ سے کیا گیا جہاں لینڈ مافیا کی جانب سے سرکاری اراضی پر قبضہ کرنے کی کوششیں کی جا رہی تھیں۔ سی ڈی اے کی طرف سے کیے جانے والے گرینڈ آپریشن میں سرکاری اراضی پر تعمیر کی گئی وسیع چار دیواری مسمار کر دی گئی۔

سی ڈی اے حکام کے مطابق چیئرمین سی ڈی اے کیپٹن (ر) محمد عثمان یونس کی ہدایات پر انفورسمنٹ ڈیپارٹمنٹ نے اسلام آباد کے مراکز اور تجارتی علاقوں میں عوامی گزرگاہوں اور فٹ پاتھوں سے تجاوزات کے خاتمے کے لیے خصوصی مہم کا آغاز کر دیا ہے۔ سی ڈی اے حکام کا کہنا تھا کہ مہم کے دوران انفورسمنٹ ڈیپارٹمنٹ نے سیکٹر F-11 مرکز، F-10 مرکز، F-7 مرکز، G-9/4 پشاور موڑ میں تجاوزات کے خلاف بھرپور کارروائی کی، جس کے دوران سڑکوں کے اطراف، عوامی گزرگاہوں اور فُٹ پاتھوں پر موجود درجنوں غیرقانونی سٹالز کو ہٹا دیا گیا۔

علاوہ ازیں 9 ٹرکوں پر مشتمل تجاوزات کا سامان بھی ضبط کر لیا گیا۔ حکام کا کہنا تھا کہ مارگلہ ٹاؤن فیز ون اور موٹروے چوک سے تجاوزات ہٹاتے ہوئے 2 ٹرک کا تجاوزات کا سامان بھی ضبط کر لیا گیا۔

حکام کا مزید کہنا تھا کہ سید پور گاؤں میں نیشنل پارک کی حدود میں ایک مکان غیر قانونی طور پر تعمیر کیا جا رہا تھا۔ سی ڈی اے کی جانب سے غیرقانونی طور پر زیرِ تعمیر مکان کو مسمار کر کے سرکاری اراضی واگزار کروا لی گئی۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کیلئے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔

About Rizwan Ali Shah

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے