اسلام آباد میں 117 کوآپریٹو ہاؤسنگ سوسائٹیز غیر قانونی قرار اور نوٹسز جاری: وزیر مملکت شہادت اعوان

اسلام آباد: وزیر مملکت برائے قانون و انصاف سینیٹر شہادت اعوان نے کہا ہے کہ اسلام آباد میں 117 کوآپریٹو ہاؤسنگ سوسائٹیوں کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے انہیں نوٹسز جاری کر دیے گئے ہیں جبکہ عدالتِ عالیہ نے اس پر ایک کمیشن بھی تشکیل دے رکھا ہے۔

ایوان بالا کے اجلاس میں وقفہ سوالات کے دوران سوالات کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پچھلے پونے چار سال کے دوران غیر قانونی ہاؤسنگ سوسائٹیوں کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔

ان کا کہنا تھا کہ ہاؤسنگ سوسائٹیوں کی نورا کشتی اور کرپشن کا خاتمہ حکومت کی ترجیحات میں شامل ہے جبکہ اس ضمن میں عوام سے ناانصافی اور دھوکہ دہی میں ملوث افراد جلد قانون کے شکنجے میں ہوں گے۔

انہوں نے ایوان کو بتایا کہ اسلام آباد میں کوآپریٹو ہاؤسنگ سوسائٹیوں کا سالانہ آڈٹ ہوتا ہے اور کسی بھی شکایت پر کارروائی کرنا حکومت کی ذمہ داری ہے۔

انہوں نے کہا کہ سوسائٹیز کے فراڈ میں مالکان عمومی طور پر زیادہ زمین ظاہر کر کے کم خریدتے ہیں اور آپس میں بھی وہ نورا کشتی کر رہے ہوتے ہیں۔

انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ وہ غیر قانونی ہاؤسنگ سوسائٹیوں کے جھانسے میں نہ آئیں۔

ایک اور سوال کے جواب میں وزیر مملکت نے کہا کہ 46 ممالک پاکستان کے شہریوں کو ویزہ فری انٹری دے رہے ہیں۔

سینیٹر فوزیہ ارشد کے ضمنی سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ احساس ریڑھی بان پروگرام کے تحت اسلام آباد کے مختلف سیکٹرز میں 127 لائسنس جاری کئے گئے ہیں۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کیلئے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔

About Zeeshan Javaid

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔