سی پیک کے دوسرے مرحلے میں اربوں روپے کی سرمایہ کاری متوقع

اسلام آباد: وزیراعظم کے معاونِ خصوصی برائے امورِ سی پیک خالد منصور نے کہا ہے کہ پاک چین اقتصادی راہداری کے دوسرے مرحلے کے تحت چین مواصلات سمیت 7 شعبوں میں اربوں ڈالر کی مزید سرمایہ کاری کرے گا۔

وفاقی دارالحکومت میں پریس کانفرنس سے خطاب میں معاونِ خصوصی خالد منصور کا کہنا تھا کہ سی پیک اتھارٹی میں ون ونڈو آپریشن کا آغاز کیا گیا ہے جبکہ ریلوے کے ایم ایل ون اور توانائی کے منصوبوں پر مثبت پیشرفت متوقع ہے۔

انہوں نے کہا کہ چینی کمپنیاں گوادر میں پیپر اور اسٹیل کی ری سائیکلنگ کیلئے پلانٹ لگانے کے منصوبے پر غور کر رہی ہیں۔ دھاتی مصنوعات کی ایکسپورٹ کیلئے تقریباً ساڑھے 4 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری بھی متوقع ہے جبکہ 19 مختلف شعبوں کی کمپنیوں نے اربوں ڈالرز کی سرمایہ کاری میں دلچسپی کا اظہار کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اقتصادی رابطہ کمیٹی نے آئی پی پیز کے لئے 100 ارب روپے کی گرانٹ کی منظوری دی تھی جس میں سے 50 ارب روپے کی رقم 9 آئی پی پیز کو ادا کی گئی ہے اور باقی 50 ارب روپے اسی ماہ کے آخر تک ان کو ادا کر دیے جائیں گے۔

خالد منصور کا کہنا تھا کہ کہ زراعت اور ٹیکسٹائل کے شعبے میں چینی سرمایہ کاروں نے سرمایہ کاری میں دلچسپی کا اظہار کیا ہے۔ چینی کمپنیوں نے زرعی سینٹر بنانے کی بھی پیشکش کی ہے جبکہ چینی کمپنی کراچی پورٹ پر ایل این جی اسٹوریج کیلئے بھی سرمایہ کاری کرے گی۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کیلئے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔

About Zeeshan Javaid

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے