سی پیک کے تحت خصوصی اقتصادی زونز کی ترقی کے لیے فریم ورک معاہدہ تیار

image (29)

اسلام آباد: چیرمین بورڈ آف انویسٹمنٹ عاطف بُخاری کا کہنا ہے کہ پاکستان چین اقتصادی راہداری سی پیک کے تحت صنعتی تعاون کو بڑھانے سے متعلق فریم ورک معاہدے پر دستخط سے خصوصی اقتصادی زونز کی ترقی کا آغاز ہوگا۔

وہ فریم ورک معاہدے سے متعلق مشاورتی فورم سے خطاب کررہے تھے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان اور چین کا یہ تعاون ایک خوشحال اور صنعتی پاکستان کا باعث بنے گا۔

اُنہوں نے اُمید ظاہر کی کہ سی پیک کے تحت صنعتی تعاون کی بنیادی باتیں طے کر کے ترقی کے نئے مواقع پیدا ہوں گے اور نئی راہیں کھلیں گی۔

اُنہوں نے کہا کہ یہی مناسب وقت ہے کہ پاکستان چین کے ساتھ اِس اشتراک سے مکمل فائدہ اٹھائے۔

عاطف بُخاری کا مزید کہنا تھا کہ چین اور پاکستان کے مابین جغرافیائی قربت اِن خصوصی اقتصادی زونز کو دونوں ممالک کے معاشی فائدے کا باعث بنائیں گی۔

اُنہوں نے کہا کہ گزشتہ چند ماہ میں سی پیک کے تحت 4 خصوصی اقتصادی زونز، جو کہ رشکئی، دھابیجی، ایم تھری علامہ اقبال اور بوستان میں واقع ہیں، نے تکمیل کے منازل طے کیے۔

اُنہوں نے واضح کیا کہ اس فریم ورک معاہدے کو سی پیک کے طویل مدتی معاہدے کے ساتھ جوڑا اور ترتیب دیا جا رہا ہے۔

بی او آئی سیکرٹری فرینہ مظہر نے سی پیک کے دوسرے مرحلے کے ایکشن پلان پر بات کی، جس میں خصوصی اقتصادی زونز، چینی صنعتوں کی پاکستان منتقلی، زرعی تعاون کے فروغ اور کاروباری امکانات کے لیے سرکاری و نجی شراکت داری شامل ہیں۔

 

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانا بلاگ۔