رواں سال جولائی میں 424 ملین ڈالر کا کرنٹ اکاؤنٹ سرپلس ریکارڈ

image (27)

اسلام آباد: وزیرِ اعظم عمران خان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اعلان کیا کہ رواں مالی سال کے پہلے مہینے جولائی میں مُلک کا کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ ختم ہوگیا اور کرنٹ اکاؤنٹ 424 ملین ڈالر کے سرپلس میں چلا گیا۔

اپنے بیان میں اُنہوں نے کہا کہ ملک کا کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ ختم ہوگیا اور کورونا وائرس کے باوجود معیشت دُرست سمت میں گامزن ہے۔

انہوں نے لکھا کہ پچھلے سال یعنی جولائی 2019 میں مُلک کا کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ 613 ملین ڈالر تھا اور رواں سال جون میں یہ خسارہ 100 ملین ڈالر رہ گیا تھا۔

وزیرِ اعظم نے ٹویٹ میں کہا کہ معیشت میں بہتری کی وجہ برآمدات میں اضافہ ہے اور جون کے مقابلے میں برآمدات میں 20 فیصد اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔

جولائی میں برآمدات 1.89 ارب ڈالر رہیں جبکہ گزشتہ سال جون میں یہ 1.58 ارب ڈالر ریکارڈ ہوئی تھیں۔

علاوہ اس کے اوور سیز پاکستانیوں نے بھی جولائی کے مہینے میں 2 ارب 76 کروڑ 81 لاکھ ڈالرز کا ریکارڈ زر مبادلہ بھیجا۔

اسٹیٹ بینک نے وزیرِ اعظم کے اس بیان کی مزید تشریح کرتے ہوئے اسے حکومت اور اپنی مثبت پالیسیز سے جوڑا اور کہا کہ یہ گزشتہ سال اکتوبر کے بعد چوتھا سرپلس ہے۔

اسٹیٹ بینک کا کہنا ہے کہ رواں مالی سال درآمدات میں بھی گزشتہ سال جولائی کی نسبت 13 فیصد کمی آئی یعنی امپورٹ بِل کی کمی کی وجہ سے روپے پر دباؤ کم رہا۔

 

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانا بلاگ۔