سی پیک میں دیگر ممالک کی شرکت پر پاکستان اور چین  کی باہمی رضامندی

بیجنگ/اسلام آباد: چینی وزارتِ خارجہ کا کہنا ہے کہ پاکستان اور چین کے مابین سی پیک میں دیگر ممالک کی شرکت پر اتفاق اور باہمی رضامندی پائی جاتی ہے۔

تفصیلات کے مطابق چینی وزارتِ خارجہ کے ترجمان لیجیان ژاؤ نے سی پیک کے تمام منصوبوں کو محفوظ، ہموار اور اعلیٰ معیار کے ساتھ آگے بڑھانے کیلئے پاکستان کے ساتھ مل کر کام کرنے کے عزم کا اعادہ کرتے ہوئے کہا کہ ہماری خواہش ہے کہ دونوں ممالک کے عوام کو اس کا فائدہ پہنچے۔

چینی دارالحکومت بیجنگ میں میڈیا نمائندگان کو بریفنگ دیتے ہوئے لیجیان ژاؤ نے کہا کہ ہم چین اور پاکستان کے مابین طے پانے والے اہم اتفاقِ رائے پر عملدرآمد کیلئے تیار ہیں۔

پاک چین اقتصادی راہداری (سی پیک) منصوبے کو افغانستان تک توسیع دی جائے گی۔

ترجمان چینی وزارتِ خارجہ لیجیان ژاؤ نے کہا کہ سی پیک کے موجودہ اتفاقِ رائے پر دونوں ممالک تیسرے فریق پر مشتمل تعاون پر مبنی اسکیموں کو فروغ دیں گے۔

واضح رہے کہ پاک چین اقتصادی راہداری منصوبے کو خطے کی تعمیر و ترقی کا سب سے بڑا منصوبہ سمجھا جاتا ہے۔

دوسری جانب اپنے ٹوئٹر پیغام میں چین میں پاکستانی سفیر معین الحق نے کہا کہ سی پیک کے مشترکہ ورکنگ گروپ کے تیسرے اجلاس میں سی پیک کی اعلیٰ معیار کی ترقی پر زور دیا گیا ہے۔

دونوں ممالک نے نے سی پیک میں دلچسپی رکھنے والے دیگر ممالک کی شرکت کا خیر مقدم کیا۔

وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری نے شنگھائی تعاون تنظیم (ایس سی او) اور ’شنگھائی اسپرٹ‘ کے مقاصد اور اصولوں کے لیے پاکستان کے عزم کا اعادہ کیا تھا۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے چین کے سٹیٹ کونسلر اور وزیر خارجہ وانگ یی سے شنگھائی تعاون تنظیم کے وزرائے خارجہ کی کونسل کے اجلاس کے سائیڈ لائنز پر ہونے والی ملاقات میں کیا۔

وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری نے اس موقع پرمزید کہا کہ پاکستان اور چین ترقی اور روابط کے لیے ایک اہم علاقائی پلیٹ فارم کے طور پر شنگھائی تعاون تنظیم کا مکمل فائدہ اٹھانے کے لیے مکمل ہم آہنگی رکھتے ہیں۔

پاکستانی وزیر خارجہ نے اس بات پر زور دیا کہ سی پیک کی ترقی ایک نئے مرحلے میں داخل ہوگئی ہے جس میں صنعت، زراعت، آئی ٹی اور سائنس و ٹیکنالوجی کی اعلیٰ معیاری ترقی پر خاص توجہ مرکوز ہے جبکہ سماجی و اقتصادی ترقی کو بھی یقینی بنایا جا رہا ہے۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کیلئے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔

About Zeeshan Javaid

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔