وزیر اعظم نے سی ڈی اے کی تنظیم نو کی منظوری دے دی

CDA restructuring approved

اسلام آباد:      وزیر اعظم عمران خان نے کیپٹل ڈویلپمنٹ اتھارٹی (سی ڈی اے) کی تنظیم نو کی منظوری دے دی اور ہدایت کی ہے کہ اس سلسلے میں مجوزہ پلان حتمی منظوری کے لئے کابینہ کے اگلے اجلاس میں پیش کیا جائے۔

وزیر اعظم آفس سے جاری ایک بیان کے مطابق،”اس منصوبے کا مقصد اتھارٹی کی تنظیم نو کرنا ہے جو اسے موثر بنائے اور اپنی خدمات کی بہتر فراہمی کیلئے اقدامات کرے۔ تنظیم نو کا مقصد سی ڈی اےمیں کارپوریٹ گورننس کے موثر ماڈل کو متعارف کرانا ہے ۔”

ذرائع کے مطابق، حکومت نجی عہدیداروں کو سی ڈی اے بورڈ میں شامل کرنا چاہتی ہے جیسا کہ دیگر حکومتی اداروں میں رواج پذیر ہے۔

اسلام آباد ہائی کورٹ نے دسمبر 2017 میں فیصلہ سنا  دیا تھا کہ سی ڈی اے بورڈ اور چیئرمین کا تقرر نجی شعبے سے سی ڈی اے آرڈیننس 1960 کے مطابق مسابقتی عمل کے ذریعے کیا جائے۔

سی ڈی اے کے چیئرمین عامر علی احمد نے بھی گذشتہ چھ ماہ کی پیشرفت رپورٹ پیش کی اور وزیر اعظم کو آگاہ کیا کہ پہلی بار سی ڈی اےکی مالی حالت میں نمایاں بہتری آئی ہے اور ادارے کے پاس 11 ارب روپے دستیاب   ہیں جنہیں ترقیاتی سرگرمیوں کے لئے استعمال کیا جائے گا۔

اس سلسلے  میں ، I-11 ، I-14 ، I-15 اور E-12 کے لئے پی سی1 کی منظوری دے دی گئی ہے جبکہ E-12 میں ترقیاتی سرگرمیاں جلد ہی شروع ہوجائیں گی۔

قبل ازیں وزیر اعظم کو اسلام آباد کے ماسٹر پلان میں پیشرفت کے بارے میں بھی آگاہ کیا گیا ۔

بتایا گیا کہ ماسٹر پلان پر نظرثانی کے لئے تشکیل دیئے گئے کمیشن نے اپنی رپورٹ کو حتمی شکل دے دی ہے جو کابینہ کے اگلے اجلاس میں پیش کی جائے گی۔

وزیر اعظم نے کمیشن کی کوششوں کی تعریف کی اور شہری تخلیق نو ، مطابقت اور نئے بلڈنگ کوڈ ، کچی آبادیوں ، سالڈ ویسٹ مینجمنٹ پلان سمیت کچھ اہم امور کو حل کرنے کے لئے کوششوں کو سراہا۔  انہوں نے ہدایت کی کہ دیہی علاقوں کے لئے پانی کی دستیابی اور بڑھتی آبادی کی ضروریات کو پورا کرنے کے لئے نئے بنیادی ڈھانچے کو یقینی بنایا جائے۔

وزیر اعظم عمران خان نے اسلام آباد میں بنڈل جزیرہ کراچی اور نیو بلیو ایریا کے مجوزہ ترقیاتی منصوبے کا جائزہ لینے کے لئے ایک اور اجلاس کی صدارت بھی کی۔

اس میٹنگ میں وزیر برائے سمندری امور سید علی حیدر زیدی ، وزیر اعظم کے معاون خصوصی ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان ، بی او آئی کے چیئرمین زبیر گیلانی ، نیا پاکستان ہاؤسنگ اتھارٹی کے چیئرمین ریٹائرڈ لیفٹیننٹ جنرل انور علی حیدر اور دیگر اعلی افسران نے شرکت کی۔

بلیو ایریا کی ترقی پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ یہ مباحثہ غیر ملکی سرمایہ کاروں کو ایسے علاقوں کی ترقی کے لئے مراعات کی پیش کش کے اردگرد تھا جو زیر استعمال  نہیں ہیں ۔

وزیر اعظم نے ان تجاویز پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ہماری ترجیح شہر کی بڑھتی آبادی کی رہائش کی ضروریات کو دور کرنے کے لئے کثیر المنزلہ عمارتوں کی ضرورت ہے ۔ اس سلسلے میں غیر ملکی سرمایہ کاروں کی سہولت میں بہتری کی ضرورت تھی۔

About Maham Tahir

Comments

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔